اشعار بزمِ سخن

میری ڈائری سے حصہ دوم

میری ڈائری سے حصہ دوم

“میری ڈائری سے” کے تحت میں اردو ادب کا وہ حصہ شئیر کرونگا جسے بچپن سے اپنی ڈائریوں میں لکھتا چلا آ رہا ہوں
یہ اس سیریز کا دوسرا حصہ ہے، پہلا حصہ یہاں دستیاب ہے

[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

ممکن ہے ایسا وقت ہو ترتیبِ وقت میں
دستک کو تیرا ہاتھ اٹھے، میرا در نہ ہو

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

وہ آئے بزم میں اتنا تو میرؔ نے دیکھا
پھر اسکے بعد چراغوں میں روشنی نہ رہی

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے – حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

موت کیا ہے زمانے کو سمجھاؤں کیا
اک مسافر تھا رستے میں نیند آ گئی

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

انجمن میں تبصرے تھے سب کے میری ذات پر
اک ترا خاموش رہنا وجہء رسوائی ہوا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

نہ پوچھ مجھ سے میری داستانِ شام و سحر
وفا کے نام پر پیہم فریب کھانا پڑا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

محفل کے بیچ سن کے مرے سوزِ دل کا حال
بے اختیار شمع کے آنسوں نکل پڑے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

دنیا میں قتیلؔ اس سا منافق نہیں کوئی
جو ظلم تو سہتا ہے پر بغاوت نہیں کرتا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

یوں تصور پہ برستی ہیں پرانی یادیں
جیسے رم جھم میں برسات کا سماں ہوتا ہے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

اک شخص اس طرح میرے دل میں اتر گیا
جیسے وہ جانتا تھا میرے دل کے راستے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

غم تمہارا نہیں جاناں، ہمیں دکھ اپنا ہے
تم بچھڑتے ہو تو ہم خود سے بچھڑ جاتے ہیں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

جل گیا اپنا نشیمن تو کوئی بات نہیں
دیکھنا یہ ہے کہ اب آگ کہاں لگتی ہے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کون کھائیگا فریبِ دوستی میری طرح
کس کو اپنی ذات سے ہے دشمنی میری طرح

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

فصلِ گل کچھ بھی نہیں، بادِ صبا کچھ بھی نہیں
تیری محفل ہو تو جنت کی فضا کچھ بھی نہیں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

زخموں سے بدن گلزار سہی پر ان کے شکستہ تیر گنو
خود ترکش والے کہدیں گے یہ بازی کس نے ہاری ہے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

خود ہی تو کر دیا مجھے طوفان کے سپرد
پھر ڈھونڈتے ہیں خود ہی مری ہمسفر مجھے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

قصور آپ کا ہے کچھ، نہ ہے فلک کی خطا
ہمارا دل ہی بنا تھا شکستگی کے لیے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

حسرتیں، جیسے لکیریں ریت پہ بکھری ہوئی
خود بناتے جائیے، خود مٹاتے جائیے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

حالِ دل کس کو سنائیں گے ترے شہر کے لوگ
قصۂ غم کو بھی ڈھولک کی صدا کہتے ہیں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

اے جنوں! چل تو سہی کوچۂ جاناں کی طرف
جینا دشوار سہی، مرنا تو آساں ہو گا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کاش ڈھل جاؤں تری خاطر کسی ترتیب میں
یوں تو اک بکھرا ہوا مجموعۂ افکار ہوں میں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

دریا پار یہ سوچ کر چلنا
گھڑے بدل بھی جاتے ہیں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

یوں تو میرے خلوص کی قیمت بھی کم نہ تھی
کچھ کم شناس لوگ تھے دولت پر مر گئے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

قربت تو بڑی چیز ہے اے جانِ تمنا
اس کی تسلی کو تیرا نام بہت ہے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

نہ جانے کتنے ارادوں میں بٹ گیا ہے وجود
تمہیں بھلا بھی دیا اور بے قرار بھی ہوں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

حسرت ہے کوئی غنچہ ہمیں پیار سے دیکھے
ارمان ہے کوئی پھول ہمیں دل سے پکارے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

یار و غمخوار میرا حال تو سب پوچھتے ہیں
اور پھر پوچھ کے سب کہتے ہیں قسمت تیری

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

یہ کیا ہوا تیری دنیا کو اے خدائے کریم
کہ زندہ لوگ ترستے ہیں زندگی کے لیے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

اشکوں کے دیپ پلکوں پہ رکھ کر تمام رات
ڈھونڈا ہے ہم نے آپ کو جانے کہاں کہاں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کس آنکھ میں خوابوں کے نہیں عکس اترتے
ہے کون جو سوچوں کا سکندر نہیں ہوتا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

حالات میرے پاؤں کی زنجیر بن گئے
شرطِ وفا کس سے نبھاؤں تو کس طرح

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کلیوں کو کون صحنِ چمن میں جگائے گا
خود سو گئی صبا تیری زلفوں کی چھاؤں میں

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

قاصد کی اس طرح گردن نہ مارئیے
اسکی خطا نہیں ہے میرا قصور تھا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

یوں نہ پھیلاؤ سرِ عام بدن کی خوشبو
ورنہ ہو جائے گا یہ پھول بھی رسوا اک دن

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

اشک بہہ بہہ کے مرے جب خاک پر گرنے لگے
میں نے تجھ کو تیرے دامن کو بہت یاد کیا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

درد میٹھا ہو تو رُک رُک کے کسک ہوتی ہے
یاد گہری ہو تو تھم تھم کے قرار آتا ہے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کہہ جاتے ہیں اک سانس میں برسوں کے فسانے
جب آنکھ کے گوشے سے ڈھلک جاتے ہیں آنسو

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

افسانۂ حیات کے سب رنگ اڑ گئے
باقی کتابِ دل پہ ترا نام رہ گیا

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

ہاتھوں پہ لکھ کے چومتے رہتے ہیں انکا نام
مدت گزر گئی ہے انہیں خط لکھے ہوئے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کچھ کہہ نہ سکے اہلِ وفا، اہلِ جہاں سے
واقف تھا یہاں کون محبت کی زباں سے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

کہہ کر سویا ہوں یہ اپنے اضطرابِ شوق سے
جب وہ آئیں قبر پر فوراً جگا دینا مجھے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

لو تھر تھرا نہ جائے چراغِ حیات کی
اتنا طول نہ دو شبِ انتطار کو

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

ایسا نہ ہو یہ درد بنے دردِ لادوا
ایسا نہ ہو کہ تم بھی مداوا نہ کر سکو

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

خوشی یہ کم تو نہیں لطفِ زندگی کے لیے
کسی سے بھیک نہ مانگی کبھی خوشی کے لیے

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

اب دل کے فسانے کو بیاں کرتے ہیں آنسو
اب ہم سے مرے غم کی حفاظت نہیں ہوتی

[/box]
[box title=”میری ڈائری سے حصہ دوم” style=”noise” box_color=”#eff0bf” title_color=”#000000″ radius=”4″]

امیرِشہر نے کاغذ کی کشتیاں دے کر
سمندروں کے سفر پر کیا روانہ ہمیں

[/box]
[spacer size=”30″]
[spacer size=”10″]

انتخاب و پیشکش: مسعودؔ

اردو شاعری کی بہترین سائٹ
اردو شاعری کی بہترین سائٹ
Shab-o-Roz

راقم کے مطعلق

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

اظہار کیجیے

تبصرہ کرنے کے لیے یہاں کلک کیجیے